قصور وار ہوں تو 10 مرتبہ پھانسی پر لٹکائیں ، انڈونیشیاءمیں سزائے موت کے منتظر پاکستانی کا پہلا بیان سامنے آگیا،حکام کو چیلنج دیدیا

قصور وار ہوں تو 10 مرتبہ پھانسی پر لٹکائیں ، انڈونیشیاءمیں سزائے موت کے منتظر پاکستانی کا پہلا بیان سامنے آگیا،حکام کو چیلنج دیدیا

Posted by
آج تک ایپل نے کل کتنے آئی فون فروخت کئے ہیں؟ تعداد اتنی زیادہ کہ کوئی تصور بھی نہ کرسکتا تھا، جان کر آپ کی بھی حیرت کی انتہا نہ رہے گی
لاہور میں 100ارب روپے کی لاگت سے نالج پارک بنانے کا فیصلہ

جکارتہ ، اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) انڈونیشیاءمیں بھارتی باشندے کی طرف سے منشیات کے مقدمے میں پھنسائے گئے پاکستانی شہری ذوالفقارعلی کا پہلا بیان سامنے آگیاہے اور اُنہوں نے کہاہے کہ اگر وہ قصور وار ہیں تو اُنہیں 10مرتبہ پھانسی پر لٹکائیں لیکن وہ بے قصور ہیں اور اگر کوئی کچھ کرسکتاہے تو ایک انسان کو بچانے کیلئے کچھ کرلے ،چندگھنٹے باقی ہیں ،متنازعہ ٹرائل کے بعد سزائے موت پر عمل درآمد کیلئے دوسری جگہ منتقل کردیاگیاہے جبکہ الزام لگانیوالا بھارتی باشندہ بھی اپنے بیان سے مکرچکاہے ۔
انگریزی جریدے ’ڈان ‘ کے مطابق ذوالفقارعلی نے بتایاکہ” اگرحکومتی سطح پر انڈونیشیاءسے بات کی جائے تو سزا ختم ہوسکتی ہے ، وہ اپیل کرتے ہیں کہ ایک مرتبہ حکام بات کرکے کیس پر تبادلہ خیال کریں، یہ رابطہ بے شک سفارتی سطح پر کرلیں ،اگر قصور وار نکلاتو دس مرتبہ ماریں ، میں تیار ہوں لیکن اگر میں بے قصور ہوں تو خدا کا واسطہ ، میری زندگی بچائیں، یہ بھی مسلمان ملک ہے ، کچھ حیاکریں ، خداکاخوف کریں، جتنا بھی کرسکتے ہو، کچھ نہ کچھ تو کرو،عوام کوبھی کہتاہوں کہ ہم ملک سے اپنے بچوں اور بہن بھائیوں کیلئے نکلتے ہیں ، ایسانہیں کہ ہم ظلم یا مجرمانہ سرگرمیوں کیلئے نکلتے ہیں ، اگر کچھ کرسکتے ہوتوایک انسان اور اپنے بھائی کیلئے کچھ کرو“۔
یادرہے کہ انڈونیشین حکام نے گوجرانوالہ میں موجود ذوالفقار کے اہلخانہ کو آگاہ کردیاہے کہ نساکمبنگان جیل منتقلی کے بعد جلد ہی ملزم کو فائرنگ سکواڈ کاسامنا ہوگااور موت کے گھاٹ اتاردیاجائے گا۔ ذوالفقار کی بہن نے کہاکہ ’براہ مہربانی میرے بھائی کو بچایاجائے ،مجھے یہ معلوم نہیں کہ حکام سے کیا کہوں لیکن صرف یہی درخواست کرنی ہے کہ میرے بھائی کوبچایاجائے ، ہماری کفالت کیلئے وہ واحد شخص ہے‘۔انہوں نے بتایاکہ ’میری ٹیلی فون پر ذوالفقار سے بات ہوئی ، وہ کہتاہے کہ بے گناہ ہے ، اس نے کچھ بھی نہیں کیا، ایسے جرم میں شریک کیاگیاجو اس نے کبھی کیا ہی نہیں ، انڈونیشیاءکے حکام نے اس کی کوئی بات نہیں سنی اور کہاکہ اسے مارنے جارہے ہیں ، میں حکومت پاکستان سے اپیل کرتی ہوں کہ کچھ کریں ، ہمارے پاس اب وقت نہیں ، ہم صرف اللہ سے دعا کرسکتے ہیں کہ وہ اس پر رحم کرے‘۔52سالہ ذوالفقار چھ بہنوں کا اکلوتابھائی ہے جو گزشتہ 12سال انڈونیشیاءکی جیل میں ہے اور فیملی کا واحد کفیل ہے ۔جکارتہ میں 300گرام ہیروئن کے مقدمے میں بھارتی شہری گردیپ سنگھ کے بیان پر نومبر2004ءمیں بزنس مین ذوالفقار کوویسٹ جاوا میںاس کے گھر سے حراست میں لیاگیاتھا جبکہ برطانوی اخبار گارڈین نے لکھاکہ ذوالفقار علی نے بتایاتھا کہ حکام نے اسے تین دن تک اپنے گھر میں قید رکھا اور اعترافی بیان دستخط ہونے تک پیٹتے رہے اور اسی وجہ سے بعدازاں اسے معدے اور گردوں کا آپریشن بھی کرانا پڑا۔ گردیپ سنگھ کو ایئرپورٹ سے ہیروئن سمیت پکڑاگیاتھا اوراس نے موقف اپنایاتھاکہ یہ منشیات اس کے پڑوسی ذوالفقار علی نے ہی اسے دی تھیں لیکن بعدازاں ذوالفقار علی کیخلاف الزام واپس لے لیا گیاکیونکہ اس کے گھر سے کوئی منشیات نہیں ملی تھیں ۔ الزام واپس لیے جانے کے باوجود ذوالفقار کو پھانسی کی سزا ہوئی اور انہیں پھانسی دینے کی تیاریاں آخری مراحل میں پہنچ چکی ہیں۔
دوسری طرف دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریانے بتایاکہ انڈونیشیاءسے رابطے میں ہیں ، کوشش کررہے ہیں جبکہ انڈونیشی سفیر کو بھی ممکنہ سزائے موت پر عمل درآمد کے سلسلے میں دفتر خارجہ طلب کیاگیا۔ادھرنڈونیشیا میں پاکستانی سفیر عاقل ندیم نے ذوالفقار کی سزا رکوانے کیلئے انڈونیشین صدارتی محل میں رابطے تیز کردیے ہیں اور وہ آج انڈونیشین وزیر سے ملاقات کریں گے۔پاکستانی سفیر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ذوالفقار علی کے کیس میں بڑی غلطیاں ہوئی ہیں اور انڈونیشین حکومت نے انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے جس کی وجہ سے انڈونیشین رائے عامہ اور اخبارات ذوالفقار کو پھانسی دینے کے خلاف ہیں۔

Facebook Comments
آج تک ایپل نے کل کتنے آئی فون فروخت کئے ہیں؟ تعداد اتنی زیادہ کہ کوئی تصور بھی نہ کرسکتا تھا، جان کر آپ کی بھی حیرت کی انتہا نہ رہے گی
لاہور میں 100ارب روپے کی لاگت سے نالج پارک بنانے کا فیصلہ

:متعلقہ خبریں

Open